گونگے عاشق کیساتھ مل کر والدہ کو ابدی نیند سلانے والی گونگی لڑکی کی ضمانت منظور

لاہور(نیوز ڈیسک) باپ بھائیوں کے معاف کرنے پر ماں کی قاتلہ کی ضمانت منظور کر لی گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق لاہور میں ماں کو قتل کرنے کی ملزمہ قوت گویائی سے محروم لڑکی کی والد اور بھائیوں کی جانب سے معاف کر دینے پر ایک لاکھ روپے مچلکوں کے عوض درخواست ضمانت منظور کی۔ملزمہ کو بھائیوں اور والد نے اللہ کی رضا کی خاطر معاف کیا جن کے بیان کی روشنی میں ایڈیشنل سیشن جج سید شہزاد مظفر نے ضمانت منظور کی۔فجر انعام کے خلاف تھانہ گلشن روای پولیس میں قتل کا مقدمہ درج ہوا تھا۔ملزمہ پر اپنی سگی ماں کو قتل کرنے کا الزام ہے۔یکم جون 2021ء کو عدالت

نے ماں کو قتل کرنے والے گونگی بہری لڑکی اور اس کے گونگے عاشق پر فرد جرم عائد کی تھی۔۔پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ گونگی لڑکی فجر انعام گونگے لڑکے محمد اعظم سے پیار کرتی تھی، لڑکی کی والدہ رشتے کے لیے راضی نہیں تھی،گونگے لڑکے نے لڑکی کو قتل کرنے کے لیے اکسایا جس پر لڑکی نے مقتولہ پر نماز کی حالت میں حملہ کیا۔ملزمہ نے پہلے ڈنڈے سے وار کیا پھر ماں کو گلا دبا کر قتل کیا۔سیشن عدالت نے گونگی لڑکی اور اس کے گونگے عاشق پر فرد جرم عائد کی تھی۔واضح رہے کہ گذشتہ سال اگست میں گلشن اقبال کی حدود میں خاتون کو قتل کر دیا گیا تھا جب کہ اس کی بیٹی لاپتہ ہو گئی تھی۔ خاتون کے قتل اور بیٹی کے لا پتہ ہونے کا مقدمہ درج کر لیا گیا تھا۔ابتدائی تفتیش میں بتایا گیا کہ گلشن اقبال میں نا معلوم افراد نے 47 سالہ بسم اللہ انعام کو قتل کر دیا جبکہ اس کی 20 سالہ بیٹی فجر انعام لا پتہ ہے۔پولیس نے مقتولہ کے شوہر انعام الحق کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا تھا۔تاہم بعدازاں اس معاملے میں اہم پیش رفت سامنے آئی بتایا گیا کہ خاتون کو قتل کرنے والی اس کی اپنی بیٹی نکلی ۔20 سالہ فجر نے اپنے دوستوں کے ہمراہ والدہ کو قتل کیا۔والدہ کو قتل کرنے کے بعد دوست کے ساتھ فرار ہوئی،جس کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آ گئی جس میں لڑکی کو اپنے دوست کے ساتھ موٹر سائیکل پر فرار ہوتے دیکھا جا سکتا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں