پی ڈی ایم سربراہی چھوڑنے کی خبریں ، مولانا فضل الرحمن نے اہم اعلان کردیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پی ڈی ایم کی سربراہی چھوڑنے کی دھمکی دینے سے متعلق خبروں کو بے بنیاد قرار دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق انہوں نے کہا ہے کہ بعض چینل پرسربراہی سے متعلق چلنے والی خبریں بے بنیاد ہیں ، نواز شریف اور آصف زرداری سے ایسی کوئی گفتگو نہیں ہوئی ، ہم متحد اور متفق ہیں۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ افواہیں پھیلانے والے غفلت کی نیند میں سو رہے ہیں ، پی ڈی ایم کی تحریک نے 70 فیصد مقاصد پورے کرلیے ، اس سلسلے میں 4 فروری کو سربراہی اجلاس میں مزید اہم فیصلے ہوں گے۔

یاد رہے کہ اس سے پہلے خبر آئی تھی کہ مولانا فضل الرحمان نے حکومت مخالف اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی سربراہی چھوڑنے کی دھمکی دے دی ، ذرائع نے بتایا کہ مولانا فضل الرحمان نے گلے شکوے کرتے ہوئے پی ڈی ایم کی سربراہی چھوڑنے کی دھمکی دے دی ہے ، مولانا فضل الرحمان نے شکوہ کیا کہ ضمنی الیکشن میں حصہ لینے کا اعلان پی ڈی ایم کو اعتماد میں لیے بغیر کیا گیا، سینیٹ الیکشن میں حصہ لینے کا اعلان بھی میڈیا میں کیا گیا۔مولانا فضل الرحمان کا مؤقف ہے کہ مسلم لیگ ن اور پاکستان پیپلز پارٹی اپنے فیصلے پی ڈی ایم پر مسلط کر رہے ہیں ، جب بلاول اور مریم نے خود ہی فیصلے کرنے ہیں تو پھر مجھے سربراہی کیوں دی گئی ، انہوں نے کہا کہ طے ہوا تھا کہ ہر فیصلہ پی ڈی ایم جماعتوں کی مشاورت سے ہو گا، چھوٹی جماعتوں کو خدشات ہیں کہ پاکستان پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن استعمال کر رہی ہے ، جس پر دیگر جماعتوں کے رہنماؤں کو بھی خدشات ہیں۔؂ ذرائع نے بتایا کہ مولانا فضل الرحمان نے سابق صدر آصف علی زرداری اور سابق وزیراعظم نواز شریف کو اپنے خدشات سے آگاہ کر دیا ہے ، جس پر آصف علی زرداری اور نواز شریف نے مولانا فضل الرحمان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اتحاد برقرار رہنا چاہئیے ، دونوں رہنماؤں نے مولانا فضل الرحمان سے کہا کہ آپ کی شکصیت ہی پی ڈی ایم کو آگے لے کر چل سکتی ہے ، آصف زرداری اور نواز شریف نے مولانا فضل الرحمان کو یقین دہانی کروائی کہ آئندہ شکایت نہیں ملے گی، ہر فیصلہ مشاورت سے ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں